247

کورونا وائرس پر پارلیمانی کمیٹی کا تیسرا اجلاس، لیگی رہنما مشاہد اللہ خان کا بائیکاٹ

اسلام آباد: مسلم لیگ (ن) کے رہنما مشاہد اللہ خان نے کورونا وائرس کی صورتحال پر ہونے والے پارلیمانی کمیٹی کے تیسرے اجلاس کا بائیکاٹ کرتے ہوئے موقف اختیار کیا کہ سپیکر نے اپوزیشن کو بولنے کا وقت نہیں دیا۔

لیگی رہنما مشاہد اللہ خان نے پارلیمانی کمیٹی کے اجلاس کا بائیکاٹ کرتے ہوئے سپیکر قومی اسمبلی اسد قیصر کا رویہ متعبصانہ قرار دیا اور کہا کہ وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی کو چھ بار بولنے کی اجازات دی گئی، اگر اپوزیشن کو نہیں سننا تو بیٹھنے کا فائدہ نہیں ہے۔
پارلیمانی کمیٹی کے اجلاس میں اظہار خیال کرتے ہوئے وفاقی وزیر فہمیدہ مرزا کا کہنا تھا کہ وائرس سے پیدا اثرات کے حوالے سے مختصر اور طویل دورانیہ کی پالیسی بنانا ہوگی۔ لاک ڈاون سے غریب عوام کو روزگار کے مسائل پیش آ رہے ہیں۔
انہوں نے کہا کہ ہیلتھ ورکرز کو تریبت دینا ہوگی کہ وہ مقامی سطح پر آگاہی فراہم کریں۔ اس کے علاوہ میڈیا کو بھی کورونا وائرس کے خلاف جنگ میں مثبت کردار ادا کرنا چاہیے۔
وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی کا کہنا تھا کہ پارلیمانی کمیٹی بھرپور انداز میں اپنا کردار ادا کر رہی ہے۔ کمیٹی کو طویل دورانیہ کی پالیسیوں کے حوالے سے تجاویز پیش کرنا چاہیے۔ صحت اور معیشت کے درمیان توازن پیدا کرنا ہوگا۔ پاکستان کی معیشت طویل لاک ڈوان برداشت نہیں کر سکتی۔ طویل لاک ڈاون سے ملک میں غربت کی سطح میں اضافہ ہوگا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں