210

ملک میں نظام عدل تقریباً ختم ہوچکا، سپریم کورٹ

اسلام آباد: سپریم کورٹ کے جسٹس قاضی امین نے ایک کیس کی سماعت میں ریمارکس دیے ہیں کہ ملک میں نظام عدل تقریباً پہلے ہی ختم ہو چکا۔
سپریم کورٹ میں چیک ڈس آنر کیس میں ملزم کی ضمانت قبل ازگرفتاری کی درخواست کی سماعت ہوئی۔ ملزم ذوالفقاراحمد پر 2 کروڑ سے زائد رقم کے بوگس چیک دینے کا الزام ہے۔
درخواست گزار کے وکیل نے کہا کہ مدعی نے چیک چوری کرکے جعلی چیک دینے کا جھوٹا مقدمہ کیا، مدعی درخواست گزار کا کاروباری شراکت دار تھا۔
جسٹس عمرعطاء بندیال نے کہا کہ چیک پر2019ء کی تاریخ درج ہے لگتا ہے درخواست گزار نے شرارت سے چیک جاری کیا۔ جسٹس قاضی امین نے کہا کہ آپ نے چیک پر دستخط کر کے تاریخ بھی لکھ رکھی تھی۔
جسٹس قاضی امین نے ریمارکس دیئے کہ فوجداری کیس میں ملزم کی گرفتاری لازمی ہے جو نہ ہوتونظام عدل ہی ختم ہو جائے گا، ملک میں نظام عدل تقریباً پہلے ہی ختم ہو چکا ہے۔
سپریم کورٹ نے چیک ڈس آنر کیس میں ملزم کی ضمانت قبل ازگرفتاری کی درخواست مسترد کردی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں