182

ملکی معیشت روک کر کرنٹ اکاؤنٹ خسارہ ختم کرنا کارنامہ نہیں جرم ہے، احسن اقبال

اسلام آباد: ن لیگی رہنماء احسن اقبال کہتے ہیں کہ ملکی معیشت روک کر کرنٹ اکاؤنٹ خسارہ ختم کرنا کارنامہ نہیں جرم ہے، حکومت نے نہ پچھلے اہداف پورے کئے نہ آئندہ کرسکے گی۔
احسن اقبال نے قومی اسمبلی اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ مزید بولے کہ احتساب کے ادارے کا مقصد صرف اپوزیشن کو ہراساں کرنا ہے، قوم سے کئے گئے وعدوں اور امیدوں نے ہی قوم کو مار دیا ہے۔ اس ملک کو دوبارہ چلانے کیلئے ہمیں قومی اتفاق رائے کی ضرورت ہے۔
ن لیگی رہنماء بولے کہ اپوزیشن چنگاری لگاتی ہے اور حکومت کا کام پانی چھڑکنا ہوتا ہے، موجودہ حکومت پانی کی بجائے پٹرول چھڑک رہی ہے، سو سال بعد لکھا جائے گا ایٹمی قوتوں کے پاس وینٹی لیٹر نہیں تھے۔ ایٹمی قوتوں کے لوگ وینٹی لیٹر نہ ہونے سے موت کے منہ میں جا رہے تھے۔
انہوں نے کہا کہ آج پوری دنیا اپنے شہریوں کو کیسے تحفظ دے سکتی ہے، کسی ریاست کی کامیابی کا دارومدار مضبوط معیشت اور دفاع پر ہوتا ہے۔ دفاع کا پہیہ بڑا ہو جائے اور تعلیم صحت کا پہیہ چنگ چی کا پہیہ ہو۔ معیشت زبوں حالی میں چلی گئی ہے، معاشی چیلنج لاحق ہو چکے ہیں۔ معیشت کے لیے قومی لائحہ عمل کی ضرورت ہے، قومی یکجہتی کی ضرورت ہے۔
احسن اقبال کا کہنا تھا کہ پچھلے سال حکومت کہہ سکتی تھی کہ ابھی آئے ہیں۔ ان دو سالوں میں معیشت کا کیا حال ہے۔ ساڑھے پانچ فیصد سے جی ڈی پی گروتھ ریٹ 2018ء میں تھا۔اختلاف کے ساتھ ساتھ مقابلے کرتے ہوئے آگے بڑھنا ہو گا، جب سے یہ حکومت آئی گروتھ ریٹ کریش کر گیا ہے، ملکی تاریخ میں پہلی بار بجٹ کا حجم گزشتہ بجٹ سے سکڑا ہے، گزشتہ سال بھی کہا تھا کہ ان کے اہداف حاصل نہیں ہو سکیں گے موجودہ ٹیکس کے اہداف بھی حکومت حاصل نہیں کر سکے گی۔
اُن کا کہنا تھا کہ ملکی معیشت کو جام کر کے کہا گیا کرنٹ اکاؤنٹ خسارا کم کر دیا ہے، مضبوط ادارے بنا کر ہی ترقیاتی اہداف حاصل کئے جا سکتے ہیں، ہر بزنس مین کو چور بنا دیا گیا وہ پیسہ باہر لیجا رہے ہیں، ملک میں فیصلہ سازی کا فقدان ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں