72

سندھ اسمبلی اجلاس، حکومت اور اپوزیشن کے درمیان گرما گرمی

کراچی: کراچی میں سندھ اسمبلی کے اجلاس کے دوران حکومت اور اپوزیشن کے درمیان گرما گرمی دیکھنے میں آئی، وزیر زراعت اسماعیل راہونے کہا کہ وفاقی حکومت نے شہریوں کو کورونا کے جہنم میں جھونک دیا۔
اسپیکر آغا سراج درانی کی صدارت سندھ اسمبلی کا اجلاس ہوا، حکومت اور اپوزیشن میں توتو میں میں ہوگئی۔
سندھ کے وزیرزراعت اسماعیل راہو نےوفاقی حکومت پر تنقید کےتیر چلائے کہا کہ وفاقی بجٹ میں عوام کو کچھ نہیں دیا گیا، بےروزگاری کا سیلاب آگیا۔ ٹڈی دل پر فضائی اسپرے کے لیے ایک جہاز دیا جو 13 دن سے کراچی میں خراب کھڑا ہے۔ ٹڈی دل فصلوں کو نقصان پہنچ رہا ہے اور وفاق خبر نہیں لے رہا۔
تحریک انصاف کے حلیم عادل شیخ نے جواب دیاکہ سندھ حکومت نے صوبے کو تباہ کردیا۔ سکولوں میں جانور بندھے ہوئےہیں۔ ہسپتالوں میں ادویات نہیں مل رہی۔ یہ بھی کہا کہ شناختی کارڈ میں لکھنے سے کوئی بھٹو نہیں ہوتا، بھٹو وہ ہوگا جس کا باپ دادا بھٹو ہوگا۔ تحریک انصاف کے رہنماء نے کہا کہ سندھ کو تباہ کرنے والی ٹڈیوں کا بھی خاتمہ کردیں گے۔ پی ٹی آئی رہنماء حلیم عادل شیخ نےدعا کی کہ جس نے سندھ کولوٹا ہے وہ تباہ ہوجائے، اس پرتحریک انصاف سمیت تمام اپوزیشن ارکان نے نشستوں سے کھڑے ہوکر آمین کہا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں