206

رمضان سے متعلق اعلامیے پر 100 فیصد عمل درآمد علماء کا امتحان ہے، فردوس عاشق اعوان

سیالکوٹ: وزیراعظم عمران خان کی معاون خصوصی برائے اطلاعات و نشریات فردوس عاشق اعوان نے کہا ہے کہ رمضان سے متعلق اعلامیے پر 100 فیصد عمل درآمد علماء کا امتحان ہے۔
فردوس عاشق اعوان نے پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ صدر مملکت کا علماء سے مشاورت کے بعد متفقہ اعلامیہ نہایت خوش آئند ہے اور قوم کی آواز ہے، اب مسجد کے منبر پر بیٹھے ہمارے امام اور خطیب کا امتحان بھی ہے، قوم کی نظریں علماء پر ہیں، کورونا کے خلاف مہم میں توقع ہے کہ امام حضرات شرائط اوراعلامیے پر 100 فیصد عمل درآمد کو یقینی بنائیں گے، بالخصوص دیہات میں موجود لوگ کے لیے اعلامیہ کا مرکزی نکتہ یہ ہے کہ اللہ کے گھر مسجد کو شفاء کا ذریعہ بنانا ہے اور کسی صورت کورونا کے پھیلاؤ کا ذریعہ نہیں بننے دینا۔
معاون خصوصی نے کہا کہ مسجد میں صفوں میں 6 فٹ کا فاصلہ رکھنا ہے، 60 سال سےزائدعمر کےافراد تراویح گھر میں پڑھیں، احتیاط سے ہی اس وباء سے نجات مل سکتی ہے، کورونا کےخلاف علمائےکرام کاکردارنہایت اہم ہے، لوگوں کو وباء سے بچانے کیلئے انہوں نے اعلیٰ تدبر کا مظاہرہ کیا۔
فردوس عاشق اعوان کا کہنا تھا کہ رمضان رحمتوں اوربرکتوں کا مہینہ ہے، ہر مسلمان کا محور و مرکز مسجد کا منبر و محراب ہے، لہذا مسجد کے اندر بیٹھے امام اور خطیب کورونا کی وباء کے خلاف جنگ میں ہمارا ہر اول دستہ ہیں، وہ رائے ساز ہوتے ہیں، رمضان المبارک میں کرونا وائرس کے پھیلاؤ کو روکنے کیلئے صدر مملکت کا قائدانہ کردار قابل تحسین ہے، اس وباء کا احتیاط ہی سب سے موثرعلاج ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں